• ہومزرعی ترقیاتی بینک کے بارے میں

زرعی ترقیاتی بینک کے بارے میں

زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ جو پہلے ایگریکلچرل ڈویلپمنٹ آف پاکستان کہلاتا تھا ایک شاندار مالیاتی ادارہ ہے جو مالیاتی خدمات اور ٹیکنیکل معلومات کے ذریعے زرعی شعبے کی ترقی کے لیے پیش پیش ہے۔

یہ بینک آسان، مؤثر اور پیشہ وارانہ انداز میں، مقابلے اور پائیدار بنیاد پر مالیاتی مصنوعات اور تکنیکی خدمات فراہم کر کے کسان برادری کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے وقف کیا گیا ہے، جو بینک اور کسانوں کی کامیابی کی جانب گامزن ہے۔
زرعی شعبے میں کریڈٹ کی دستیابی کو بڑھانے سے اقتصادی ترقی کو فروغ دینے کے لئے مؤثر کردار ادا کرنا، پائیدار مالی مدد، خصوصی قرضہ پروگرام، تکنیکی مدد، اور دیگر مصنوعات اور خدمات تک قابل بھروسہ رسائی اورملازمین کی پیشہ ورانہ اور تکنیکی مہارت کے لیے ترقی کے مواقع کو فروغ دینا۔.
زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ جو پہلے ایگریکلچرل ڈویلپمنٹ آف پاکستان کہلاتا تھا ایک شاندار مالیاتی ادارہ ہے جو مالیاتی خدمات اور تکنیکی معلومات کے ذریعے زرعی شعبے کی ترقی کے لیے پیش پیش ہے۔
سابق ایگریکلچرل ڈویلپمنٹ آف پاکستان کی تنظیم نو کا مقصد زراعی پیداوار کو فروغ دینا، ادارہ جاتی کریڈٹ کو مربوط بنانا اور کسان برادری کی آمدنی پیدا کرنے کی صلاحیت میں اضافہ کرنا ہے تا کہ زرعی اور دیہی شعبے کو بہتر بنایا جائے۔ زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ کو اے ڈی بی آرڈیننس 1961 کی تنسیخ کے ذریعے 14 دسمبر 2002 کو ایک عوامی لمیٹڈ کمپنی کے طور پر متعارف کرایا گیا تھا۔ اس طرح اسے آر ایف آئی کے طور پر خدمت سر انجام دینے والے کاروباری ادارے میں تبدیل کر دیا گیا۔

نئے کاروباری ڈھانچے میں بینک کی حثیت کا کمپنیز آرڈیننس 1984 کے تحت از سر نو تعین کیا گیا ہے اور اسے ایک عوامی محدود کمپنی کے طور پررجسٹر کیا گیا ہے اور اس کا ایک آزاد بورڈ آف ڈائریکٹرز ہے جس کا مقصد اچھی گورننس، خود مختاری اور اعلی معیار کی فراہمی ہے۔

زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ ایک اہم آر ایف آئی ہے جو دہی پاکستان کی 68 فیصد آبادی کو سستی، دیہی اور زرعی مالیاتی / غیر مالیاتی خدمات فراہم کرتی ہے. بینک ملک بھر میں اپنی 488 شاخوں کے نیٹ ورک کے ذریعہ ہر سال تقریبا پانچ لاکھ صارفین اور تقریبا ایک ملین کھاتہ داروں کے لیے خدمات انجام دے رہا ہے اور قرض کی اوسط رقم ایک لاکھ باسٹھ ہزار تین سو اکتیس روپے ہے جس سے بالترتیب 68٪، 29٪ اور 3٪ کم آمدن، اقتصادی اور بڑے کاشتکاروں کو خدمات فراہم کی جارہی ہیں۔

بینک کی مجموعی اثاثہ جات کی مالیت 31 دسمبر 2011 کو 123 ارپ روپے تھی جب کہ ملک بھر میں اس کے ملازمین کی تعداد 5789 ہے۔ زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ کا 30 جون 2013 تک واجب الادا کل قومی ادارہ جاتی ایگریکلچرل کریڈٹ 40 فیصد ہے۔
ملک کے مالی اور عملی طور پر پائیدار آر ایف آئی کے طور پر ترقی اور سرگرمی
دیہی کیمیونٹی خاص طور پر چھوٹے کسانوں کو کریڈٹ، مشاورت اور خدمات کی بروقت فراہمی سے کی ان کی پیداوار اور آمدن میں اضافہ کرنا۔
زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ کے ایک فعال، صارف دوست، مالیاتی اور عملی طور پر پائیدار ملکی مصنوعات کی پیش کش سے تشخص کو ابھارنا۔
رابطوں کی فراہمی سے قدر میں اضافے کے ذریعے زرعی اجناس کے سلسلے کو مستحکم بنانا۔
عوامی - نجی اور بڑے پیمانے پر - پرچون شراکت داری کے ذریعے رسائی میں اضافہ اور کام کی لاگت کو کم کرنا۔
ایک دیہی کمرشل بینک کے طور پر کام کے ذریعے دیہی سرمایہ کی تشکیل کو فروغ دینا اور صارف کو کریڈٹ کی حقیقی قدر کی فراہمی کے ذریعے زرعی شعبے کو تجارتی بنیادوں پر استوار کرنا۔ صارفین کو خطرات کے خلاف انشورنس کی مصنوعات کی وسیع تر رینج کی فراہمی۔
ملکی اور بین الاقوامی بینکنگ انڈسٹری میں اپنی سرگرمیوں کو پھیلانا تاکہ مقابلے کی فضا سے استفادہ کیا جائے۔
صحت مند اور اچھی طرح سے کام کرنے والی دیہی مالیاتی مارکیٹیں قومی پالیسی مقاصد کے دو اہم مقاصد یعنی دیہی / زرعی ترقی کو تیز کرنے اور غربت میں کمی کے اہداف کے حصول کے ساتھ براہ راست تعلق رکھتی ہیں۔ ان مقاصد کو عملی جامہ پہنانے کے عمل کا انحصار دہی مالیات اور غیر مالیاتی مارکیٹوں پر ہوتا ہے تاکہ دیہی مالیات کے متنوع وسائل پیدا کر کے ترقی کے ساتھ ساتھ پائیدار مالیاتی اداروں کی تعمیر اور دیہی شعبے میں مصنوعات اور سرمایہ کاری کی فراہمی کو فروغ دینا ہے. اس کے لئے دیہی فنانس کو میکرو اقتصادی استحکام کے فریم ورک کے اندر مساوی ترقی کے لیے لازم و ملزوم حصہ کے طور پر دیکھا جانا چاہیے. بڑے کاروباری ڈھانچے کی تنظیم نو دیہی مالیاتی مارکیٹ کی ترقی کے لیے بنیادی اصلاحات کی بنیاد فراہم کرتی ہے۔

بار بار کے مالیاتی نقصان، پرانے دیہی پیمانے پر عمل جاری رکھنے اور سرمایہ کے استعمال کی استعداد کار مین ہوتی ہوئی کمی نے بھی حکومتی حکمت عملی میں تبدیلی کو فروغ دیا ہے جو اب رسائی میں بہتری کے لیے فعال وساطت کی طالب ہے۔
اکثریت کے لئے سستی دیہی مالیاتی خدمات تک رسائی عالمی تجارتی تنظیم کے بعد کے دورمقابلہ کرنے کی اہلیت بھی بہت اہم ہے۔ اعلی مالیاتی اخراجات کے باعث مقابلہ کرنے میں ناکامی سے کسانوں اور دیہی صارفین کی اکثریت، خاص طور پر چھوٹے اور بمشکل گزر اوقات کرنے والے صارفین کی آمدنی کم ہوسکتی ہے۔ سستی دیہی مالیاتی خدمات تک رسائی میں کمی گاہکوں کو غیر زرعی سرگرمیوں کی طرف منتقلی سے بھی روک تھام ہوگی۔
زیڈ ٹی بی ایل کا تنظیم نو کے حوالے سے درج ذیل منصوبہ ہے؛
1۔ گورننس: ایسی فضاء قائم کریں جو اچھی حکمرانی اور احتساب کا باعث ہو؛
2۔ نظام: ٹیکنالوجی، نیٹ ورکنگ اور مواصلاتی آلات کے استعمال کے ذریعے اپنی سرگرمیوں کو جدید بنانا؛
3۔ کاروباری عوامل: مصنوعات اور فراہمی کے نظام میں بہتری تاکہ لین دین کے اخراجات کمی، سرگرمیوں کو سادہ بنانے اور رسائی میں بہتری ہو؛
4۔ مصنوعات اور خدمات: ایسی مصنوعات اور خدمات کو متعارف کرانا جو مالیاتی طور قابل عمل ہوں؛
5۔ انسانی وسائل کی ترقی: معیار اور انتظامیہ اور سٹاف کی مہارتوں کو بہتر بنانا اور تربیتی صلاحیت کو مستحکم بنانا؛ اور
6۔ آئی ٹی: فرینزک اکاؤنٹنگ اور خطرے کے انتظام کے افعال سمیت اکاؤنٹنگ سسٹم اور ایم آئی ایس کی مدد کے لیے نئے ہارڈویئر اور سافٹ ویئر پلیٹ فارم کا قیام۔
ان اصلاحات کے ذریعے زیڈ ٹی بی ایل کو ہر صورت ملک کے ایک اہم آر ایف آئی میں تبدیل کیا جائے گا جس کا مقصد سالانہ چھ لاکھ دیہی صارفین رسائی حاصل ہو۔ بینک نجی شعبے کے کردار میں توسیع کے ذریعے سرکاری اور نجی شعبوں کی شراکت اور بڑے پیمانے اور مختصر قرضوں کے میکانزم کی وساطت سے اعلی تکنیکی دیہی اور زرعی مالیاتی خدمات کے نیٹ ورک کا قیام چاہتا ہے۔

پیسے بھیجنا اور وصول کرنا

زرعی ترقیاتی بینک لمیٹڈ کی اپلی کیشن کے زریعے بہت آسان ہے۔

جلد آ رہا ہے

اپنے ان باکس میں تازہ ترین مضامین اور اعلانات حاصل کریں

اِس ویب سائٹ کے بہترین ویو کے لیے اسے IE10 یا کسی بھی نئے براؤزرمیں کھولیں